Go to ...
RSS Feed

کراچی میں گندم اور آٹے کے بحران اور من مانے نرخوں کی فروخت پر اراکین سندھ اسمبلی ایم کیو ایم پاکستان کا ردعمل مہنگائی کے تلے پسے عوام کی روزمرہ کی زندگی گزارنا بھی مشکل کیا جا رہا ہے۔اراکین اسمبلی سندھ ایم کیو ایم پاکستان آٹے کا مصنوعی بحران ختم کرایا جائے اس میں ملوث اور اسکے ذمہ داروں کے خلاف سخت کاروائی عمل میں لائی جائے۔اراکین اسمبلی سندھ ایم کیو ایم پاکستان کراچی۔۔۔15جنوری 2020ء


متحدہ قومی موومنٹ پاکستان کے اراکین سندھ اسمبلی نے کراچی میں گندم اور آٹے کے بحران اور من مانے نرخوں کی فروخت پر ردعمل کا اظہار کرتے ہوئے کہا ہے کہ مہنگائی کے تلے پسے عوام کو روزمرہ کی زندگی گزارنا بھی مشکل کیا جا رہا ہے۔ آٹے اور گندم کی 100کلو بوری پر 800 اور 600روپے اضافہ اور سرکاری قیمت مقرر نہ کرنے پر محکمہ خوراک سندھ اور حکومت سندھ کی بدنیتی ظاہر ہوتی ہے۔ آٹے کا مصنوعی بحران پیدا کرکے گراں فروشی اور من مانے داموں کی وصولی کے لئے یہ اقدام کیا گیا ہے جسکی ہم مذمت کرتے ہیں۔ جبکہ پنجاب میں بھی اس طرح کے اقدامات کی اطلاعات ہیں۔ہم وفاقی اور صوبائی حکومتوں سے مطالبہ کرتے ہیں کہ آٹے کا مصنوعی بحران ختم کرایا جائے۔ اس میں ملوث اور اسکے ذمہ داروں کے خلاف سخت کاروائی عمل میں لائی جائے۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *