Go to ...
RSS Feed

متحدہ قومی موومنٹ پاکستان کے ڈپٹی کنوینر و سندھ اسمبلی کے پارلیمانی لیڈر کنور نوید جمیل،رکن رابطہ کمیٹی و ممبر صوبائی اسمبلی خواجہ اظہاالحسن و دیگر اراکین سندھ اسمبلی کا واٹر بورڈ میں مشیر کی تعیناتی پر گہری تشویش کا اظہار وزیر بلدیات کی جانب سے سندھ حکومت کے ماتحت ادارہ واٹربورڈ میں مشیر کی تعیناتی غیر آئینی، غیر قانونی اور سول سرونٹ ایکٹ کے خلاف ہے جس کی جتنی بھی مذمت کی جائے کم ہے۔اراکین سندھ اسمبلی ایم کیو ایم پاکستان وزیر اعلیٰ سندھ واٹر بورڈ میں مشیر کی غیر قانونی تعیناتی کا نوٹس لیں اور منتخب نمائندوں کے اختیارات کو برو ے کار لا کر واٹر بورڈ کو ایک مساوی ادارہ بنائیں۔اراکین سندھ اسمبلی ایم کیو ایم پاکستان کراچی۔۔۔03جنوری2020ء


متحدہ قومی موومنٹ پاکستان کے ڈپٹی کنوینر و سندھ اسمبلی کے پارلیمانی لیڈر کنور نوید جمیل،رکن رابطہ کمیٹی و ممبر صوبائی اسمبلی خواجہ اظہاالحسن و دیگر اراکین سندھ اسمبلی نے واٹر بورڈ میں مشیر کی تعیناتی پر گہری تشویش کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ وزیر بلدیات کی جانب سے سندھ حکومت کے ماتحت ادارہ واٹربورڈ میں مشیر کی تعیناتی غیر آئینی، غیر قانونی اور سول سرونٹ ایکٹ کے خلاف ہے جس کی جتنی بھی مذمت کی جائے کم ہے۔انہوں نے کہا کہ واٹر بورڈ میں مشیر کی تعیناتی سے اندازہ ہوتا ہے کہ واٹربورڈ میں پانی کی تقسیم، سیوریج کے مسائل کے حل اور انفراسٹرکچر کی بحالی کے لئے جو افسران تعینات کئے گئے ہیں وہ سب ناکارہ ہیں اورمشیر کی تعیناتی ایم ڈی سمیت تمام افسران کی صلاحیتوں پر سوالیہ نشان اٹھاتی ہے یہ واضع ہو گیا کہ محکمہ بلدیات کراچی کے مسائل کے حل میں مکمل طور پر ناکام ہوچکا ہے۔اراکین نے مزید کہا کہ من پسند نا اہل افسران نے لاکھوں روپے تنخواہیں وصول کرکے اہلیان کراچی کو پانی کی بوند بوند کے لئے ترسا دیا ہے اور سونے پہ سہاگہ چہیتا مشیر تعینات کرکے خزانے پر مزید بوجھ لاد دیا گیاحلانکہ اعزازی مشیر قانونی طور پر کسی بھی افسر کو ہدایات جاری نہیں کر سکتاواٹربورڈ کیلئے شہر میں منتخب یوسی چیئرمین، ضلعی چیئرمین، ایم این اے اور ایم پی اے موجود ہیں جو فی سبیل اللہ واٹربورڈ کی کارکردگی بہتر بنانے کے لِئے وزیربلدیات کو مسلسل تجاویز دے رہے ہیں جس پر توجہ نہیں دی جا رہی۔اراکین سندھ اسمبلی نے وزیر اعلیٰ سندھ سے مطالبہ کیا کہ واٹر بورڈ میں مشیر کی غیر قانونی تعیناتی کا نوٹس لیں اور منتخب نمائندوں کے اختیارات کو برو ے کار لا کر واٹر بورڈ کو ایک مساوی ادارہ بنائیں۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *