Go to ...
RSS Feed

ایم کیو ایم پاکستان کے مرکز بہادر آباد میں پاکستان تحریک انصاف کے وفد کی وفاقی وزیر اسد عمر کی قیادت میں ایم کیو ایم پاکستان کے کنوینر ڈاکٹر خالد مقبول صدیقی و دیگر رہنماؤں سے ملاقات وفاقی کا بینہ سے علیحدگی کے فیصلے پر قائم ہیں،ہم نے حکومت کا ساتھ دینے کا جو وعدہ کیا ہے اسے جاری رکھیں گے۔کنوینر ایم کیو ایم پاکستان ڈاکٹر خالد مقبول صدیقی ہم نے جو وعدے کئے تھے ان سب پر عمل کیا ہے اب ہم تمام وعدوں کی تکمیل اور سندھ کے شہری علاقوں میں معاہدے کے مطابق کام ہوتادیکھنا چاہتے ہیں۔ڈاکٹر خالد مقبول صدیقی آج ایم کیو ایم پاکستان کے مر کز پر آنے کا مقصد کراچی کے منصوبوں پر بات چیت تھا۔وفاقی وزیر اسد عمر ایم کیو ایم پاکستان کی شکایات جائز ہیں اور ہماری یہ خواہش ہے کہ ایم کیو ایم پاکستان وفاقی کابینہ کا دوبارہ حصہ بنے۔اسد عمر کراچی۔۔۔13جنوری 2020ء


ایم کیو ایم پاکستان کے مرکز بہادر آباد میں پاکستان تحریک انصاف کے وفد نے وفاقی وزیر اسد عمر کی قیادت میں ایم کیو ایم پاکستان کے کنوینرڈاکٹر خالد مقبول صدیقی و دیگر رہنماؤں کے ہمراہ ملاقات کی جو پہلے سے طے شدہ تھی۔پی ٹی آئی کے وفد میں سندھ اسمبلی کے اپوزیشن لیڈر فردوس شمیم نقوی اراکین سندھ اسمبلی خرم شیر زمان،حلیم عادل شیخ،رکن قومی اسمبلی آفتاب صدیقی شامل تھے جبکہ متحدہ قومی موومنٹ پاکستان کے وفد کی قیادت کنوینر ڈاکٹر خالد مقبول صدیقی نے کی انکے ہمراہ سینئر ڈپٹی کنوینر عامر خان،ڈپٹی کنوینر کنور نوید جمیل،اراکین رابطہ کمیٹی سید امین الحق،خواجہ اظہار الحسن،فیصل سبزواری بھی موجود تھے ڈیڑھ گھنٹہ طویل گفتگو میں قومی وسیاسی اور سندھ کے شہری علاقوں کے در پیش مسائل پر تفصیلی گفتگو ہوئی بعد ازاں ایم کیو ایم پاکستان کے مرکز پر میڈیا نمائندگان سے گفتگو کرتے ہوئے ڈاکٹر خالد مقبول صدیقی نے کہا کہ ہماری آج کی ملاقات پہلے سے طے شدہ تھی اور وفاقی وزیر اسد عمر اپنی ٹیم کے ہمرا ہ ہمارے مرکز پر تشریف لائے اور ترقیاتی کاموں سمیت مختلف امور پر گفتگو ہوئی۔وفاقی وزیر و تحریک انصاف کے رہنما اسد عمر نے میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ آج ایم کیو ایم پاکستان کے مر کز پر آنے کا مقصد کراچی کے منصوبوں پر بات چیت تھا ہم نے ایم کیو ایم پاکستان جو ہماری اتحادی جماعت ہے اور اسکی سینئر قیادت کو بھی آج اپنے منصوبوں کے حوالے سے بریفنگ دی ہے جس میں یہ آگاہ کیا گیا ہے کہ فروری میں وزیر اعظم پاکستان کراچی آکر کچھ منصوبوں کا افتتاح کرینگے۔اسد عمر نے کہا کہ ہم ایم کیو ایم پاکستان کے ساتھ مل کر مشترکہ طور پر کام کرنا چاہتے ہیں آج کی ملاقات کوئی مذ اکرات نہیں بلکہ ترقیاتی کاموں کے حوالے سے آئندہ کالا ئحہ عمل طے کرنا تھا۔انہوں نے کہا کہ ایم کیو ایم پاکستان کی شکایات جائز ہیں اور ہماری یہ خواہش ہے کہ ایم کیو ایم پاکستان وفاقی کابینہ کا دوبارہ حصہ بنے۔میڈیا نمائندہ گان کے سوالوں کے جواب دیتے ہوئے ڈاکٹر خالد مقبول صدیقی نے کہا کہ وفاقی کا بینہ سے علیحدگی کے فیصلے پر قائم ہیں ہم نے حکومت کا ساتھ دینے کا وعدہ کیا ہے اسے جاری رکھیں گے اور ہم نے جو وعدے کئے تھے ان سب پر عمل کیا ہے اب ہم تمام وعدوں کی تکمیل اور سندھ کے شہری علاقوں میں معاہدے کے مطابق کام ہوتا نظر آئے اس کے منتظر ہیں۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *