Go to ...
Muttahida Quami Movement on YouTubeRSS Feed

زیادتی اورقتل کے واقعات پرمسلسل بات کرنے اورآگہی دینے کے بہترنتائج حاصل ہوتے ہیں،رکن رابطہ کمیٹی کشورزہرا


زیادتی اورقتل کے واقعات پرمسلسل بات کرنے اورآگہی دینے کے بہترنتائج حاصل ہوتے ہیں،رکن رابطہ کمیٹی کشورزہرا 
کسی بھی واقعہ کو نظر انداز کرنے کا مطلب درندہ صفت لوگوں کی حوصلہ افزائی کے مترادف ہے ، رکن رابطہ کمیٹی ہیر سوہو
ہمیں بچوں کو آگاہ کرنا ہوگا کہ اس قسم کے حالات کا مقابلہ کسطرح کیاجاسکتا ہے ، این جی او آہنگ کی نمائندہ مسرت جبیں
جنسی طور پر ہراساں کرنے کا عمل ہر سطح پر قابل مذمت ہے، انچارج شعبہ خواتین سکندر خاتون 
قصور میں مظلوم بیٹی زینب اور معصوم بچوں کو زیادتی کے بعد قتل کرنے کے بہیمانہ واقعات کے خلاف 
ایم کیوایم پاکستان شعبہ خواتین کے زیراہتمام منعقدہ مذمتی اجلاس سے خطاب 
کراچی ۔۔۔14، جنوری 2018ء
قصور میں مظلوم بیٹی زینب اور معصوم بچوں کو زیادتی کے بعد قتل کرنے کے بہیمانہ واقعات کے خلاف متحدہ قومی موومنٹ پاکستان شعبہ خواتین کے زیراہتمام ایک مذمتی اجلاس منعقد ہوا اور ان واقعات کی روک تھام اور آگہی کے حوالے سے مختلف تجاویز پیش کی گئیں جن پر فی الفور عملدرآمد کرنے پر اتفاق بھی کیا گیا ۔ اجلاس سے رابطہ کمیٹی کی رکن و رکن قومی اسمبلی کشور زہرا ،رابطہ کمیٹی کی رکن و رکن سندھ اسمبلی محترمہ ہیر سوہو ، ین جی او’’آہنگ‘‘ سے منسلک محترمہ مسرت جبیں، شعبہ خواتین کی انچارج سکندر خاتون ، جوائنٹ انچارج محترمہ شہانہ اشعر ، رکن سندھ اسمبلی محترمہ نائلہ لطیف نے خطاب کیا ۔ محترمہ کشور زہرا نے اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ بچوں اور بچیوں کے ساتھ زیادتی اور قتل کے واقعات پر مسلسل بات کرنے اور آگہی دینے کے بہتر نتائج حاصل ہوتے ہیں ، اجلاس میں موجود تمام خواتین ان بہیمانہ واقعات کی نزاکت سے واقف ہیں ہمیں وقتا فوقتا ایسے پروگرام ترتیب دینے ہونگے تاکہ خواتین کو ٹریننگ دے کر عملی طور پر میدان میں اتارا جاسکے ۔ انہوں نے تجویز پیش کی کہ اسکولوں کی سطح پر ان واقعات کے خلاف آگہی پروگرام کا انعقاد ہونا چاہئے تاکہ طلبہ اور طالبات اس حساس موضوع کی نزاکت سے آگاہ ہوسکیں ۔ اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے محترمہ ہیر سوہو نے کہا کہ ہمیں اپنے بچوں کو اچھا اور برا بتانا ہوگا اور کسی بھی واقعہ کو نظر انداز کرنے کا مطلب درندہ صفت لوگوں کی حوصلہ افزائی کے مترادف ہوگا ۔ انہوں نے کہاکہ پہلے ہی قدم پر بچوں کو روکنا ضروری ہے اور اپنے بچوں کو محفوظ بنانے کیلئے عملی اقدامات کرنا ہوں گے ۔ اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے این جی او آہنگ سے منسلک محترمہ مسرت جبیں نے کہا کہ ہم اپنے بچوں کو روکتے ہیں تو بچوں میں تجسس پیدا ہوتا ہے ، ہمیں بچوں کو وقت دینا ہوگا اور ان کے رہن سہن پر نظر رکھنی ہوگی ۔ انہوں نے کہاکہ انسانی فطرت اور جبلت میں شامل خواہشات کو کسطرح کنٹرول کیا جاسکتا ہے ، ہمیں بہت سوچ سمجھ کر اس طریقہ کار پر عمل کرنے کی ضرورت ہے اور ہمیں بچوں کو آگاہ کرنا ہوگا کہ اس قسم کے حالات کا مقابلہ کسطرح کیاجاسکتا ہے ۔ اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے شعبہ خواتین کی انچارج محترمہ سکندر خاتون نے کہاکہ جنسی طور پر ہراساں کرنے کا عمل ہر سطح پر قابل مذمت ہے اور قابل افسوس بات یہ ہے کہ لڑکیوں اور لڑکوں کو یکساں طور پر ان حالات کا سامنا ہے جس کا تدارک اور حل ضروری ہے ۔ اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے جوائنٹ انچارج محترمہ شہانہ اشعر نے کہا کہ ایم کیوایم شعبہ خواتین ہر سطح پر لوگوں میں آگہی پیدا کرنے کی کوشش کرتی رہی ہے ، آج ضرورت اس بات کی ہے کہ ہم اپنے بچوں کو جنسی بدسلوکی کے حوالے سے آگہی دیں تاکہ وقت پڑنے پر وہ اپنادفاع کرسکیں ۔ اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے رکن سندھ اسمبلی محترمہ نائلہ لطیف نے کہاکہ بچوں اور بچیوں سے زیادتی اور قتل کے واقعات ہمارے معاشرے کی ناہمواریوں کو ثابت کرتے ہیں اور ان ناہمواریو ں کو صحیح کرنے کیلئے ہمیں ہر سطح پر آواز بلند کرنا ہوگی اور اقدامات اٹھانے ہوں گے ۔
*****

Tags: ,

More Stories From Urdu News