Go to ...
Muttahida Quami Movement on YouTubeRSS Feed

پیپلزپارٹی وزیراعلیٰ ہاؤس خالی کرے،مردم شماری صحیح ہوگئی توایم کیوایم کے وزیراعلیٰ کوآنے سے کوئی نہیں روک سکتا،ڈاکٹرمحمدفاروق ستار


پیپلزپارٹی وزیراعلیٰ ہاؤس خالی کرے،مردم شماری صحیح ہوگئی توایم کیوایم کے وزیراعلیٰ کوآنے سے کوئی نہیں روک سکتا،ڈاکٹرمحمدفاروق ستار
ایم کیوایم کا نام ، نشان اور منشور پاکستان میں مستقل تبدیلی کی ضمانت ہے ، ہم پاکستان سے گلے سڑھے نظام کو تبدیل کریں گے، ڈاکٹر محمد فاروق ستار 
مہاجر وہ ہیں جن کی نسبت آقا حضرت محمد ؐ سے ملتی ہے ، جب وہ مہاجر نام ختم نہیں ہوسکتا ہے اس مہاجر نام کو کیسے ختم کیاجاسکتا ہے، سینئر ڈپٹی کنوینر عامر خان 
نہ اب اور نہ آئندہ آنے والے کل میں حق پرستوں اور ایم کیوایم کا ساتھ چھڑوایا جاسکتا ہے، رکن رابطہ کمیٹی عبد الحسیب 
نوابشاہ ، میر پور خاص اور ٹنڈو الہیار میں جو مناظر دیکھے ہیں وہ 30سال میں نہیں دیکھے ، رابطہ کمیٹی رکن شبیر قائم خانی
ایم کیوایم کو دفن کرنے کی باتیں کرنے والے جان لیں کہ ایم کیوایم کوئی دیوار نہیں جسے توڑ دیاجائے ، آرگنائزر نوابشاہ معظم خان 
22اگست کے بعد جو حالات ہوئے تھے دشمن یہ سمجھتے تھے کہ ایم کیوایم کا وجود ختم ہوگیا ہے، شعبہ خواتین نوابشاہ کی انچارج نجمہ جمال 
حیدرآباد کے اکبری گراؤنڈ میں 8دسمبر کو ہونے والے جلسہ عام کی عوامی رابطہ مہم کے سلسلے میں نوابشاہ کے بانکا رام روڈ منو آباد پر ہونے والے ’’متحدہ یکجہتی جلسہ ‘‘ کے شرکاء سے خطاب 
نوابشاہ ۔۔۔5، دسمبر2017ء
متحدہ قومی موومنٹ پاکستان کے سربراہ ڈاکٹر محمد فاروق ستار نے کہا ہے کہ سندھ کے نوجوانوں کی مثالی یکجہتی قائم کرکے سندھ کے وڈیروں کی مصنوعی اکثریت کی بنیاد پر جو اقتدار پر قبضہ ہے اسے بھی انشاء اللہ تعالیٰ 2018ء کے الیکشن میں ختم کردیں گے،8دسمبر کے جلسہ کی کامیابی کا دعویٰ میں اور آپ نہیں کریں گے بلکہ ٹی وی ٹاک شوز کے اینکر اور تجزیہ نگار یہ دعویٰ کریں گے مہاجر اور مظلوم کل بھی ایم کیوایم کے ساتھ تھے اور آج بھی ہیں،انشاء اللہ تعالیٰ ایم کیوایم کا نام ، نشان اور منشور پاکستان میں مستقل تبدیلی کا باعث ہے ، ہم پاکستان سے گلے سڑھے نظام کو تبدیل کریں گے ، پیپلزپارٹی نے ہمارا بنیادی حق مارا ہے اس کا حساب لیں گے ۔پیپلزپارٹی وزیراعلیٰ ہاؤس خالی کرے ، مردم شماری صحیح ہوگئی تو ایم کیوایم کے وزیراعلیٰ کو آنے سے کوئی نہیں روک سکتاہے ۔ان خیالات کااظہار انہوں نے حیدرآباد کے اکبری گراؤنڈ میں 8دسمبر کو ہونے والے جلسہ عام کی عوامی رابطہ مہم کے سلسلے میں نوابشاہ کے بانکا رام روڈ منو آباد پر ہونے والے ’’متحدہ یکجہتی جلسہ ‘‘ کے شرکاء سے خطاب کرتے ہوئے کیا ۔ جلسہ میں نوابشاہ کے عوام اور خواتین نے بہت بڑی تعداد نے شرکت کی ۔ انہوں نے کہاکہ اب سندھ کے وڈیروں ، جاگیرداروں کا احتساب ہوگا ، ہم نے تو اپنے ناکردہ گناہوں کا کفارہ ادا کردیا ہے ، ابھی کھیل جاری ہے اور انجام باقی ہے تماشہ تم نے دیکھا ہے تماشہ ہم بھی دیکھیں گے ۔انشاء اللہ تعالیٰ ہمارا متحان اور آزمائش ختم ہونے والی ہے اور ایک نئی صبح طلوع ہونے والی ہے ۔انہوں نے کہاکہ ہمارے جب سے سندھ کے دورے شروع ہوئے ہیں وہیں سندھ کے سیاسی بازیگروں کو دل کے دورے پڑنا شروع ہوگئے ہیں ۔انہوں نے کہا کہ کئی آپریشن ہم نے سہے ، ہمارے ہزاروں ساتھی شہید ہوئے اور گزشتہ الیکشن میں نوابشاہ کے میں بھی 6ساتھیوں کو شہید کیا گیا اور زبردستی نوابشاہ کی میونسپل کمیٹی کو ہم سے چھینا گیا ، پچھلی مرتبہ عبد الرؤف نوابشاہ کے ناظم تھے جو اکثریت سے جیتے تھے لیکن ہمیں زبردستی ہرایا گیا ۔ انہوں نے کہاکہ دھڑے کرنے کے دعوے ہیں ، دھڑے تو دکھانے کیلئے بن سکتے ہیں لیکن ایم کیوایم کے ووٹ بنک کا کوئی دھڑا نہیں ہے ، ایم کیوایم کے ووٹ بنک کا ایک ہی دھڑا ہے جو ایم کیوایم پاکستان کے ساتھ سیسہ پلائی دیوار کی طرح کھڑا ہے اور قائم و دائم ہے ۔ انہوں نے کہاکہ جب تک پاکستان کا نام قائم و دائم رہے گا تو ایم کیوایم پاکستان کا نام اس صفحہ ہستی سے کوئی مائی کا لال مٹا اور ختم نہیں کرسکتا ہے ۔ انہوں نے کہاکہ اندرون سندھ کی عوام کی خوشی کو دیکھ کر کہتا ہوں کہ آنے والا وقت ہمارا ہے اور اسے کوئی نہیں چھین سکتا ہے ۔ آج نوابشاہ کا جلسہ 8دسمبر حیدرآباد اکبری گراؤنڈ کی تیاری کے صدقے میں شرکاء کو ملا ہے ، آج ٹریلر ہے پوری فلم باقی ہے ، انشاء اللہ 8دسمبر کو اکبری گراؤنڈ حیدآباد میں پوری فلم چلے گی ۔ رابطہ کمیٹی کے سینئر ڈپٹی کنوینر عامر خان نے کہا کہ لوگوں نے بہت کوشش کی کہ کسی طرح سے ایم کیوایم کے مینڈیٹ کو تقسیم کردیاجائے لیکن یہ مینڈیٹ وہ مینڈیٹ ہے اور اس تنظیم میں وہ لوگ ہیں جنہیں مہاجر کہا جاتا ہے اور یہ مہاجر وہ ہیں جن کی نسبت ہمارے آقا حضرت محمد ؐ سے ملتی ہے ، ہمارے محمد ﷺ بھی مہاجر تھے جب وہ مہاجر نام ختم نہیں ہوسکتا ہے اس مہاجر نام کو کیسے ختم کیاجاسکتا ہے یہ ممکن ہی نہیں ہے ۔ انہوں نے کہاکہ کراچی ، حیدرآباد ، میر پور خاص اور نوابشاہ میں بھی کچھ برساتی مینڈک نکل کر آئے اور انہوں نے کہاکہ ہم پاکستان کا جھنڈا لیکر آئے ہیں اور ہم پاکستان کی بات کرتے ہیں لیکن سے کوئی پوچھے کہ کیا ہم پاکستان کی بات نہیں کرتے اور انہوں نے اس کی آڑ میں مہاجر اتحاد کو توڑنے کی کوشش کی ، کمالو صاحب آئے اور انہوں نے دعویٰ کیا کہ یہ قوم ان کے ساتھ ہے لیکن 9 تاریخ کو فارو ق ستار کی پریس کانفرنس نے بتا دیا کہ مہاجر متحد ہیں اور ایم کیوایم کو کوئی ختم نہیں کرسکتا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ ہزاروں سازشیں ہوچکی ہے یہ قوم حقوق کے حصول کیلئے کھڑی ہے اور حقوق لیکر رہے گی ۔ انہوں نے کہا کہ ایسا نہیں ہوگا کہ ایک دن حکومت میں دوسرے دن استعفیٰ دیدیا گیا اب ایسا نہیں ہوگا اب حقوق کی جدوجہد مستقل مزاجی سے جاری رہے گی ، نوابشاہ کی سیٹ زبردستی دھاندلی کرکے چھینی گئی تھی اور آئندہ الیکشن میں نوابشاہ کے عوام ثابت کریں گے کہ یہ سیٹ ایم کیوایم کی تھی اور اس کے بعد سندھ کی وزارت علیٰ بھی حاصل کریں گے ۔ رابطہ کمیٹی کے رکن عبدالحسیب نے کہا کہ چاہے جتنے بھی ظلم کرلئے جائیں ، پابند سلاسل کیاجائے ، لاپتہ کردیاجائے یا شہید کردیاجائے لیکن حق پرستوں کے تعلق کو کل کسی جبر کے ذریعے الگ نہیں کیا جاسکا اور نہ آئندہ آنے والے کل میں حق پرستوں اور ایم کیوایم کا ساتھ چھڑوایا جاسکتا ہے ، یہ تحریک شہیدوں کی امانت ہے ۔رابطہ کمیٹی کے رکن شبیر قائم خانی نے کہا کہ نوابشاہ ، میر پور خاص اور ٹنڈو الہیار میں جو مناظر دیکھے ہیں وہ 30سال میں نہیں دیکھے ، ہم بکھرے ہوئے لوگوں کو متحدکرنا چاہتے ہیں، ملک بھر کے عوام مہاجروں کی ثقافت اور تمدن سیکھتے تھے لیکن آج مہاجروں کو بد قسمتی کے ایک سازش کے تحت مٹانے کی کوشش کی جارہی ہے لیکن عوام ایسا ہرگز نہیں ہونے دیں گے ۔ ڈسٹرکٹ نوابشاہ کے آرگنائزر معظم خان نے کہا کہ جلسہ کے ذریعے ایم کیوایم کو دفن کرنے کی باتیں کرنیو الوں کو بتا دینا چاہتا ہوں کہ ایم کیوایم کوئی دیوار نہیں جسے توڑ دیاجائے ، ایم کیوایم کروڑوں عوام کے دلوں میں دھڑکتی ہے اور ان کی رگوں میں دوڑتی ہے ۔ شعبہ خواتین ڈسٹرکٹ نوابشاہ کی آرگنائز محترمہ نجمہ جمال نے کہاکہ بہت سارے لوگ یہ کہتے تھے کہ 22اگست کے بعد جو حالات ہوئے تھے ہمارے دشمن یہ سمجھتے تھے کہ ایم کیوایم کا وجود ختم ہوگیا ہے اور مہاجر گھروں میں قید ہوکر رہ گئے ہیں لیکن ایسا نہیں ہوا ہے ایم کیوایم اب زیادہ مضبوط ہوئی ہے ۔
*****

Tags: ,

More Stories From 8 December Hyderabad Jalsa