Go to ...
Muttahida Quami Movement on YouTubeRSS Feed

حیدرآبادمیں آٹھ دسمبرکوہونے والی جلسہ عام کی رابطہ مہم کیلئے ڈاکٹرفاروق ستارکے کاررواں کاشہدادپورپہنچنے پروالہانہ استقبال


حیدرآبادمیں آٹھ دسمبرکوہونے والی جلسہ عام کی رابطہ مہم کیلئے ڈاکٹرفاروق ستارکے کاررواں کاشہدادپورپہنچنے پروالہانہ استقبال 
آج شہداد پور میں بہت عرصہ کے بعد ایم کیوایم کے نام پر رونق لگی ہے ، ڈاکٹر محمد فاروق ستار 
23اگست کو نعرہ لگایا تھا کہ پاکستان بنایا ہے پاکستان بچائیں گے ، اب یہ کہتے ہیں کہ ایم کیوایم بنائی ہے ایم کیوایم بچائیں گے، ڈاکٹر محمد فاروق ستار 
شہداد پور کے علاقے جانی پورا میں ڈاکٹر محمد فاروق ستار کا بڑے اجتماع سے خطاب 
شہدادپور ۔۔۔ 05، دسمبر 2017ء
متحدہ قومی موومنٹ پاکستان کے سربراہ ڈاکٹر محمد فاروق ستار حیدرآباد اکبری گراؤنڈ میں 8دسمبر کو ہونیو الے جلسہ عام کی رابطہ مہم مہم کے سلسلے کے منگل کے روز شہداد پور پہنچے تو شہداد پور کے داخلی راستے پر ان کے کاررواں پر پرتپاک استقبال کیا گیا اور یہاں سینکڑوں گاڑیاں ، موٹر سائیکلیں ، بسیں ، رکشیں ، ہائی روف اس کارواں میں شامل ہوگئیں ، اس دوران کارواں کا جگہ جگہ استقبال کیا گیا بعدازاں یہ کاررواں بڑے جلوس کی شکل میں شہداد پور کے علاقے جانی پور ا پہنچا تو یہاں ایک بڑے اجتماع سے ڈاکٹر محمد فاروق ستار نے خطاب کیا ۔ اس موقع پر رابطہ کمیٹی کے ڈپٹی کنوینر و میئر کراچی وسیم اختر ، رابطہ کمیٹی کے ارکان خواجہ اظہارالحسن ، شبیر قائم خانی ، خواجہ سہیل منصور ، شاہد علی اور شہداد پور کے عہدیداران بھی موجود تھے ۔ ڈاکٹر محمد فاروق ستار نے جانی پورا میں اپنے خطاب میں کہا کہ شہداد پور بلند ہونے والی آواز سر سید احمد خان ، مولانا محمد عل جوہر کی آواز ہے جب یہ آواز برصغیر میں بلند ہوتی تو لندن اور واشنگٹن کے ایوانوں میں بھی جاتی تھی یہ کیسے ہوسکتا ہے کہ شہداد پور سے بلند ہونے والی آواز اسلام آباد کے ایوانوں تک نہ پہنچے ۔ انہوں نے کہاکہ آج شہداد پور میں بہت عرصہ کے بعد ایم کیوایم کے نام پر رونق لگی ہے ، 23اگست کو نعرہ لگایا تھا کہ پاکستان بچایا تھا اور اب یہ کہتے ہیں کہ ایم کیوایم بنائی ہے ایم کیوایم بچائیں گے ۔ انہوں نے کہاکہ 8دسمبر کے جلسے میں سر ہی سراور انسانوں کا سمندر ہونا چاہئے اور کراؤڈ کو چارج اور انرجی سے بھر پور ہونا چاہئے ۔ انہوں نے کہاکہ 23اگست اور اس سے قبل کہا تھا کہ ابھی کھیل جاری ہے اور ابھی انجام باقی ہے مگر یہ سمجھا گیا کہ ہم مفتوحہ ہیں ، ہمیں تسخیر اور تقسیم کردیا گیا ہے ، ہمارا مذاق اڑایا گیا جاتا تھا ، شہداد پور کے عوام کی تعداد بتا رہی ہے کہ ہماری باری لگ چکی ہے اب نام نہاد چور حکمرانوں ، وڈیروں کا نمبر لگنے والا ہے ۔ انہوں نے کہاکہ ہمیں سندھ میں سندھی بولنے والے نوجوانوں اور اردو بولنے والے نوجوانوں کی مثالی یکجہتی قائم کرنی ہے ، یہ دونوں سندھ کی گاڑی کے دو پہئے ہیں جب تک دوسرے پہئے میں ہوا نہیں ہوگی تو سندھ کی گاڑی آگے نہیں چلے گی اور دونوں پہیوں کو برابر کا حق دینا ہوگا تب جاکر سندھ کی گاڑی آگے بڑھے گی ۔ انہوں نے کہاکہ 2018ء کے الیکشن میں پی پی پی اور وڈیروں کو باہر نکال کریں گے تو وہ یہ نہ کہیں کہ ہمیں کیوں باہر نکالا ہے ۔
*****

Tags: ,

More Stories From 8 December Hyderabad Jalsa