Go to ...
Muttahida Quami Movement on YouTubeRSS Feed

ڈاکٹرمحمدفاروق ستارکی گرفتارکی مذمت کرتے ہیں،محبت ،اخلاق،واخلاص سے سب کچھ بدلہ جاسکتاہے،عامرخان سینئرڈپٹی کنوینر


ڈاکٹرمحمدفاروق ستارکی گرفتارکی مذمت کرتے ہیں،محبت ،اخلاق،واخلاص سے سب کچھ بدلہ جاسکتاہے،عامرخان سینئرڈپٹی کنوینر
ایم کیوایم کومضبوط بنانے اورصلاحی عمل کے ساتھ ساتھ تحریک کے بنیادی فلسفے ونظریئے یہ کاربندہیں،خالدمقبول صدیقی
کل پوری قوم کو ڈاکٹرمحمد فاروق ستارپرہاتھ ڈال کرمشتعل کرنے کی کوشش کی گئی،کنورنویدجمیل
آج کے دن ہم اپنے شہداء اوراسیروں کویادرکھتے ہوئے انہیں سلام تحسین پیش کرتے ہیں،خواجہ اظہاالحسن
ہم نے جوقوم سے وعدہ کیاتھاہم آج بھی اس پرکاربندہیں،کشورزہرا
میں ایم کیوایم میں ساری کشتیاں جلاکرآیاہوں ساتھ کبھی نہیں چھوڑوں گا،کامران ٹیسوری
،محمدعامرخان،خالدمقبول صدیقی،کنورنویدجمیل،خواجہ اظہارالحسن،کشورزرہرا اورکامران ٹیسوری کاایم کیوایم کے33ویںیوم تاسیس کے اجتماع سے خطاب
کراچی:۔۔۔18؍مارچ2017ء
ایم کیوایم کے سینئرڈپٹی کنوینرمحمدعامرخان نے کہاکہ ہماری کنوینرڈاکٹرمحمدفاروق ستارکی گرفتارکی مذمت کرتے ہیں،محبت ،اخلاق،واخلاص سے سب کچھ بدلہ جاسکتاہے ہمارے میڈیا نے کل ہماراساتھ دیا،عزت واحترام ہماراشعارہوناچاہئے ہم میڈیاکے شکرگذارہیں کاشف عباسی،مظہرعباس،ندیم ملک،حافظ طارق سمیت تمام رینکرزکاشکریہ کہ انہوں نے حق کاساتھ دیا۔ہمارے زیادتی پرآوازاٹھانے پرہم عامرخان نے کہاکہ سوشل میڈیاکے شیروں کوکہتاہوں کہ ان کامنفی پروپیگنڈہ کہ فاروق ستار گرفتاری کے بعدکوئی لیٹردے کر آئے ہیں ثابت کردیں پیش کردیں توسیاست سے دستبرداررہ جائیں گے۔1986اور1987ء کی گرفتاری کے بعدلسٹ پیش کرتاہوں کہ لیڈرباہرلیکن کارکنان اندر رہے۔شہیدوں کی فیملیزکے لئے دلجوئی کررہی ہے ۔اپنے محدودوسائل پربھرپورکرداراداکررہے ہیں۔185ساتھیوں کی ضمانت ہوچکی ہیں پیشہ نہیں اگرہمت ہے توپاکستان آکر یہ باتیں کرو،پاکستان کے خلاف بات برداشت نہیں کرینگے۔محترمہ بے نظیربھٹوکوپتہ تھاکہ جان کاخطرہ ہے ملک میں اپنے لوگوں کے پاس آئیں اورجان دیدی۔اب بتائیں کہ وہ جو چمپئن بن رہے ہیں وہ کیوں نہیںآتے؟ ۔عامرخان نے کہاکہ سی پیک ای بہترین منصوبہ ہے ارباب اقتدارسے بات کرکے اپناحصہ مانگتے،کراچی میں تباہی لانے کے لئے غیر ملکی طاقتوں کے ساتھ ملکرکام کیاجارہاہے۔پاکستان کے خلاف کام ہورہاہے ہم اپنی قوم کواس کاحصہ نہیں بننے دینگے۔عامرخان نے مزیدکہاکہ نظام سے بغاوت ہوسکتی ہے ریاست بغارت نہیں ہوسکتی ،ہم دوفیصدمراحات یافتہ طبقے کی اجارہ داری کے خلاف ہیں ہم 98فیصدتمام قومیتوں کے لوگوں کوملاکرتبدیلی لاناچاہتے ہیں ہم ریاست کاساتھ دینگے ملک کے خلاف کھڑے نہیں ہوں کہ باہرلاسکیں۔بابرغوری کے 21پیٹرول پمپس ہیں،ان گنت جائیدادیں ہیں،بابرغوری اورواسع جلیل ،مصطفی عزیزآبادی کوگرفتارنہیں کیا جاتا کیوں کہ یہ سب کرپٹ ہیں۔چمچہ گیربریگیڈبابرغوری ،واسع جلیل،انبساط ملک ،محمدانور،مصطفی عزیزآبادی قوم کوتقسیم کرناچاہتے ہیں غداری کے سرٹیفکیٹ بانٹ رہے ہیں۔غدار یہ لوگ ہیں جوکارکنان کواستعمال کرتے رہے ان کے جذبات سے کھیلتے رہے مخالفین سوشل میڈیاپرزیادتیوں کی بات کرتے ہیں،ظلم وستم یقیناہے ،مہاجروں کے ساتھ ظلم ہورہاہے ہم یہ سوال کرتے ہیں کہ کیاوہ چاہتے ہیں کہ ملک کے خلاف کام کریں توایسانہیں ہوگاپاکستان کے خلاف کبھی نہیں جائیں گے جویہ چاہتے ہیں وہ احمقوں کی جنت میں رہتے ہیں۔ ایم کیوایم پاکستان پاکستان بچانے کے لئے کرداراداکریں گے،پاکستان کے خلاف گھٹیازبان واسع جلیل استعمال کررہے ہیں۔عامرخان نے کہاکہ ہم الزامات کاجواب دینا چاہیں توبہت سے چہروں کانقاب اتارجائیں قوم کاشیرازہ نہیں بکھیرناچاہتے ۔عامرخان خانے کہاکہ واسع جلیل کے حال ہی میں گلستان جوہرمیں کروڑوں کاگھرخریداہے ،مصطفی عزیز آبادی کے بھائی نے10پلاٹ اوربہت سی کرپشن ہیں۔عامرخان نے کہاکہ گورنرسندھ عشرت العبادآج 14سال اقتدارکے مزے لینے کے بعدایم کیوایم کوبھتہ بازاوردیگر الزامات لگارہے ہیں اگران کا اصل چہرہ دکھادیں توپاکستان کاراستہ بھول جائیں گے۔عامرخان نے مزیدکہاکہ ہم ایم این اے ،ایم پی ایز،بلدیاتی نمائندوں کو اب کام کرناہوگا ، کام پرسلیکشن ہوگاپرچی پراب ٹکٹ نہیں ملے گا۔اخلاق بدلیں اورعوام کی خدمت کریں کارکردگی معیارہوگا۔ڈپٹی کنوینرایم کیوایم (پاکستان)خالدمقبول صدیقی نے کہاکہ ایم کیو ایم کی ابتداء کادن 18مارچ1984ء ؁ تھااورآج 33سال ہوگئے ہیں،ہمیں اللہ تعالیٰ سے اظہارتشکرکرتے ہوئے ایم کیوایم کومضبوط بنانے اورصلاحی عمل کے ساتھ ساتھ تحریک کے بنیادی فلسفے ونظریئے یہ کاربندہیں،21مارچ بہارکاآغازہے تو18،مارچ موسم بہارکے آثارہیں امید بہارہے ،ایم کیوایم بہارکاآغازہے ہمارے اورآپ کی ذمہ داری اس کی نگہبانی ہے ہمیں قوم کاسائبان اورپاسبان بنتاہے حکومت کوپیغام دیناچاہتے ہیں کہ ایم کیوایم کوتقسیم کرنے کی سازش بندکردیںیہ شجرجوایم کیوایم ہے فصل گل ہے ۔انہوں نے کہاکہ 23مارچ 1940ء ؁ کومہاجرجدوجہدکاآغازکیوں کرناپڑا؟پاکستان انہیں بنابنایاملاجودیناکے بہترین غلام تھے اس لئے اس کی قدرنہیں کی گئی لیکن ہم نے 20لاکھ جانوں کا نذرانہ دیکرملک بنایا۔ہم نے 23مارچ1940ء ؁ کوقراردادپاکستان منظورکی 7سال میں پاکستان بنایا۔ لیکن 77سال گزرگئے کیامقصدپاکستان حاصل کیاگیا۔انہوں نے کہاکہ اگرکوئی سمجھتاہے کہ ایم کویایم تقسیم ہوگئی توترکے میں تہذیب ملکی طاقت ہم اری تہذیب نہیں تہذیب ہماری طاقت ہے۔انہوں نے کہاکہ 1971ء میں سرحدیں کیوں بندکی گئیں،پاکستان کامقصدکیوں بربادکیاگیا؟ہمیں بھی اپنی تحریک کے 33سال کاحساب خودلیناہے۔ خالد مقبول صدیقی نے کہاکہ ایم کیوایم کاچراغ جلاکررکھناہے بہت تیزہواہے اسے جلتے رہناہے اسے اپنے اتحادسے جلائے رکھناہے۔انہوں نے کہاکہ م پاکستان بنانے والاہی نہیں بلکہ اس کے بچانے والے بھی ہیں ہم سے نفرت پاکستان سے نفرت ہے اس لئے ہم سے محبت کی جائے ،ہم پاکستان ہیں اورپاکستان کی مضبوطی ہونی چاہئے۔ایم کیوایم کے ڈپٹی کنوینرورکن قومی اسمبلی کنورنویدجمیل نے کہاکہ یومِ تاسیس پر عہدکرتے ہیں کہ ہم اپنے اتحادکوٹوٹنے نہیں دینگے ہم پورے کراچی سمیت تمام شہری علاقوں کی نمائندگی رکھتے ہیں لیکن پھر بھی ہمارے کنوینرکوکل جس طرح گرفتار کیا گیا حکومت کی نیت سامنے آگئی ۔ہماری قربانیوں اورپاکستانیت کی کوئی حیثیت نہیں مانی جارہی ہم تعصب کے الاؤمقدمہ فاطمہ جناح کے زمانے سے دیکھ رہے ہیں،کراچی کے لوگوں نے قائداعظم کی بہن ہونے کے ناطے ان کاساتھ دیاتھااس کے بعدسے ہمیں سزادی جارہی ہے ،ہمارے ساتھ حملے ہی حملے اورشہیدوں کی طویل درستانیں دی گئیں 17 ہزار ساتھی شہیدہوگئے۔کسی شہیدکاقاتل نہیں پکڑاگیا۔یہ افسوس ناک رویہ ہے ہمارے اسیرجیلوں میں ہیں جھوٹے مقدمات کا سامناکررہے ہیں کل پوری قوم کو ڈاکٹرمحمد فاروق ستارپرہاتھ ڈال کرمشتعل کرنے کی کوشش کی گئی ہمارے مئیر،ڈپٹی مئیراوربلدیاتی ذمہ داران کواختیارات نہیں دیئے گئے ،ہم اپنے اتحادکوکسی صورت ختم نہیں ہونے دینگے۔ کنورنویدجمیل نے کہاکہ ہم اپناوزیراعلیٰ لاکرتعصب نہیں کرینگے،ہم دیہی علاقوں پربھی بتیہ لگائیں گے۔ایم کیوایم کی رابطہ کمیٹی کے رکن و سندھ اسمبلی میں قائدحزب اختلاف خواجہ اظہار الحسن نے کہاکہ آج کے دن ہم اپنے شہداء اوراسیروں کویادرکھتے ہوئے انہیں سلام تحسین پیش کرتے ہیں۔متحدہ قومی موومنٹ کا آج 33واں یومِ تاسیس آج نئے عزم وعمل وعہدوپیماء کے ساتھ ملک کی سلامتی وبقاء کے لئے منایاجارہاہے۔ہم پرتنقیدکی جاتی ہے کہ 18مارچ1984ء ؁ کویومِ تاسیس کیوں منارہے ہیں؟18مارچ1984ء ؁ کو قوم بن رہی تھی اور22اگست کوقوم بکھررہی تھی لیکن 23اگست کے ہمارے اقدام سے قوم کونکھررہی تھی ،قوم سے غداری کاتصوربھی نہیں کرسکتے تھے۔کل ڈاکٹرمحمدفاروق ستارکے ساتھ ہونے والاواقعہ مہاجرقوم اورحق پرستوں کوللکارنے کے مترادف تھاہم اس کی انتہائی مذمت کرتے ہیں۔آج ہونے والایہ پروگرام ذمہ داران وکارکنوں کاہے توتل دھرنے کی جگہ نہیں عوام کوبلائیں گے تومیدان چھوٹے پڑجائیں گے ،1000ساتھیوں بشمول سربراہ ایم کیوایم پرجھوٹے مقدمات قائم کئے گئے ہیں،شہرمیں اندرون سندھ کی اوطاقوں کی طرح جعلی ،جھوٹے مقدمات بنارہے ہیں۔موٹرسائیکل چوری پرمقدمہ بناتے ہیںیہاں تووزیر اعظم سمیت تمام سیاسی رہنماؤں پر مقدمات ہیں،سندھ حکومت سیاسی مخاصمت کی بنیادپرکارروائیوں سے گریزکرے۔انہوں نے کہاکہ ہمیں کایاپلٹنے پرمجبورنہ کیاجائے۔27،دسمبرکومحترمہ بے نظیربھٹوکی شہادت کو خراج عقیدت پیش کرتے ہیں لیکن افسوس کہ اس دن1000گاڑیاں،ریلوے اسٹیشن ،املاک جلائی گئیں40،ہزار مقدمات تھے لیکن ختم کردئیے گئے،22اگست کے خلاف کھڑے ہونے والے23اگست کواپنانے والے آخرکیوں،مقدمات کی زدمیں ہیں؟خواجہ اظہارالحسن نے کہاکہ تیسرانظام اورتیسری طرزکی سوچ ختم ہونی چاہئے۔وزیراعظم پاکستان نے گورنرہاؤس کوکراچی سمجھ لیاہے ،وزیراعلیٰ سندھ کارویہ افسوس ناک ہے ہم نے کل گرفتاری کے باوجود تشددکی پالیسی نہیں اپنائی۔وزیراعلیٰ ہرمعاملے پریوٹرن مارتے ہیں کہ مجھے اس کانہیں معلوم۔وزیراعلیٰ کویہ علم نہیں کہ پانی کاصاف پانی نہیں۔تھرمیںآٹھ بچے مرگئے ،چندماہ رہ گئے ہیں اپنے آپ کودرست کرلینا،انشاء اللہ آئندہ وزیراعلیٰ ہمارا ہوگا۔آج یومِ تاسیس کے موقع پرہم سربراہ ایم کیوایم پاکستان کواپنے تعاون اتحاد کابھرپوریقین دلاتے ہیں اوراپنی غلطیوں کاازالہ کرناہے۔رکن رابطہ کمیٹی ورکن قومی اسمبلی محترمہ کشورزہرانے کہاکہ آج کایہ یومِ تاسیس کااجتماع پاکستان کی وحدانیت کی علامت ہے یہ پاکستان کے بانیاں کی اولادیں ہیں،ہم نے کولاچی کو کراچی بنایاہے ،23اگست کاقدم درست تھا۔انہوں نے کہاکہ ہم نے جوقوم سے وعدہ کیاتھاہم آج بھی اس پرکاربندہیں۔پی آئی بی کالونی تاریخی جگہ ہے پاکستان کابھی اس سے گہرارشتہ ہے ہم یہاں سے سندھی ، مہاجر،اتحادکی آوازبھی سنتے ہیں،ہم سب کے ساتھ ملکرچلناچاہتے ہیں ہم مہاجروں کوسب کے ساتھ اچھی روایات کے ساتھ دیکھنے کے خواہش مندہیں۔یومِ تاسیس کی اجتماع سے اپنے خطاب میں ایم کیوایم پاکستان کے رہنماء کامران ٹیسوری نے کہاکہ میرے لئے بڑادن ہے کہ میں اس جگہ کھڑاہوکرآپ سب کو 33 ویںیوم تاسیس کی مبارکبادپیش کرتاہوں،آج ثابت ہورہاہے کہ ایم کیوایم کاجومینڈیٹ ہے عوام وہ اتنی بڑی تعدادمیںیہاں موجودہے اوران کی موجودگی اس بات کا اظہار ہے کہ ہم سب ایک ہیں،کل رات ایک شب خون مارنے کی کوشش کی گئی اورہماری پارٹی کے سربراہ کوگرفتارکرنے کی کوشش کی گئی وہ اسی بات کاایک منظرنامہ تھاجس کا مقصد اردو بولنے والوں کودیوارسے لگانے کے مترادف ہے۔کیاپنجاب میں کسی پارٹی کے وارنٹ نہیں نکلے کیاعمران کے وارنٹ جاری نہیں ہوئے ہیں ان کوگرفتارکیوں نہیں کیاجاتا۔ہم سب ایک ہیں اورایم کیوایم کے پرچم تلے متحد ومنظم رہیں گے۔میں ایم کیوایم میں صرف اس لئے شمولیت اختیارکی کہ ایم کیوایم کے ساتھ زیادتیوں کی جارہی ہے ،ہمیں تومردم شماری میں بھی پیچھے دھکیلا جارہاہے لہٰذا میں اردوبولنے والوں کے ساتھ ہوں اوراس کوآگے لیکرجائیں گے۔انہوں نے کہاکہ میں ایم کیوایم میں ساری کشتیاں جلاکرآیاہوں ساتھ کبھی نہیں چھوڑوں گاایم کیوایم ایک ہے اس کامینڈیٹ کبھی نہیں چرایاجاسکے گا۔

Tags:

More Stories From Urdu News